مرگی کا گھریلو علاج 17

مرگی کا گھریلو علاج

مرگی کا گھریلو علاج : مرگی روگ کا میں کرن تنتریکا تنترا ہے . اسے ایپی لیپسی بھی کہتے ہے . کسی بھی ایج كے شخص چاہے وہ 10 سال کا ہو یا 20 کسی کو بھی ہو سکتا ہے . دورہ پڑنے پر روگی 10 منٹ سے لیکر 2-3 گھنٹے تک بے ہوش رہ سکتا ہے . اِس روگ کا دورہ روگی کو کبھی بھی پڑ سکتا ہے .

زیادہ طر یہ اس ٹائم ہوتا ہے جب روگی پانی یا آگ كے آس پاس ہو . اسلئے جس کسی بھی روگی کو مرگی کی بیماری ہو واہ ان چیزوں كے قریب آنے سے بچے . عام طور پر اِس روگ میں ایلوپیتھک ( انگلش ) دوا دینے والے زامینول ، برومایید ای ٹی سی نام کی دوائیاں دیتے ہے ، جس سے آدمی کا دماغ سن ہو جاتا ہے اور روگی کو جلدی ہی آرام مل جاتا ہے ، لیکن اِس دوا سے روگ پورا ختم نہیں ہوتا . بس وقتی طور پر اس بیماری کے اثرات کم ہو جاتے ہیں .

مرگی کا دورہ پڑھنے پر مریض کو الگ الگ علامات ہو سکتی ہیں ، لیکن کچھ عام علامات مرگی كے دورہ پڑھنے پر نظر آتے ہے –

اچانک ہاتھ ، پیر اور چہرے كے روگوں میں کھنچائو ہونے لگتا ہے .
سر اور آنکھ کی پتلیوں میں لگاتار موومنٹ ہونے لگتا ہے .
مریض یا تو پیور طرح سے بے ہوش ہو جاتا ہے یا آدھے بے ہوش ہوتا ہے اور مسلسل کانپتا رہتا ہے .
پیٹ میں گڑبڑ ہوتی رہتی ہے .
زبان کاٹنے یہ اسے چبانے لگتا ہے
مرگی كے دورے كے بعد مریض الجھن میں ہوتا ہے ، نیند سے بوجھل اور تھکا ہوا محسوس کرتا ہے .

ویسے تو مرگی ہونے كے صحیع علامات بتانا مشکل ہے لیکن کچھ میں علامات جیسے روگی کا شریر پورا سن ہو جاتا ہے .

سر پر کسی پراکار کا چوٹ لگنے كے کرن
جنم كے ٹائم برین ( دماغ ) میں اچھے سے آکْسِیْجَن کا نا پہنچ پانا .
برین تمیر
دیماغی بخار اور انسیفیلیٹیز كے انفکشن سے دماغ پر پڑھتا ہے افیکٹ .
برین اسٹروک ہونے پر بلڈ ویسیلس کو نقصان پہنچتی ہے .
نیورولوجیکال دیکیاسی جیسے الجایمار روگ .
جینیٹک کنڈیشن .
کاربن مونو آکسائڈ كی کمی كے کارن .

مرگی کا دورہ پڑھنے پر کیا کرے

منہ پر چھینٹے مارے .
روگی کو کھلی ہوا میں لے جائے .
بائے یا دے کروٹ میں لٹا دے .
دانتوں كے بیچ کپڑا یا چمچ رکھ دے تاکہ ڈانٹ لگنے سے زبان نا کٹنے پائے .
اِس ٹائم روگی کو کھلانے یا پلانے کی کوشش نا کریں .

مریض كے گھریلو علاج اور وپچار

تلسی كے رس میں کپور ملکر سونگھائیں .
رئی کو پانی كے ساتھ پیس کر سونگھائیں .
تلسی كے رس میں سادھا نمک ملکر ناک پر بود-بود گرائے .
شریفہ كے پتوں کا رس ناک میں ڈالے .
جب ہوش آ جائے تو نیمبوں رس اور ھینگ کا سوان کرائے .
گھی میں لہسن بگھو کر کھلانا چاہیے .
مرگی كے روگی کو روز کرودی كے پتوں کی چٹنی کھانی چاہیے .

پھلوں میں آم ، انجیر ، انار ، سنگترہ ، سیب ، ناشپاتی ، آڑو کا وغیرہ کا استعمال زیادہ کروائیں .
اک چمچ مہندی کا رس اک گلاس دودھ میں ملاکر پینے سے کافی زیادہ فرق ہوتا ہے .
ناشتے میں ان کوریت منتھ ، مونگ ، دودھ یا دودھ سے بنے پراڈکٹ کا استعمال کروانا اچھا ہوتا ہے .
گاجر کا مربع اور پودینہ کی چٹنی میں شامل کرے . سلاد میں کھیرا ، مولی ، گاجر ، پیاز ، ٹماٹر ، نومبو کا یوز کرے .
ٹیل میں تالا ہوا لہسن شبہہ شام کھانے اور کاچھا لہسن کی کالی دو بھاگو میں تودکار سوگھنی سے لبھ ہو گا .
ڈھیلی کپڑے پہنے اور روز شبہہ شام کھلی ہوا میں ٹہلیں.
دورے كے بعد 1-2 دن صرف پھل ہی کھائیں .
اتر دشا کی طرف سر کرکے کروٹ سوئے .
نیمبوں رس اور مدھو کا استعمال کرے .
قبض نا ہونے دے .
روز رات کو اک سفید پیاز کھائے .
بال چھوٹے رکھے ، پوزیٹو تھنکنگ اور ہیپی رہے .
مکھن یا بادام كے ٹیل سے سر کی مالش کرے .
سر اور پیٹ پر مٹی کا لیپ کرنے سے بھی راحت ملتی ہے .
نہاتے ٹائم سر اور پیٹ پر 5 منٹ تک پانی کی دھر ڈالے .
پرہیز کیا کرنا چاہئے

رات کو زیادہ دیر تک نا جاگے .
ادھیک ٹھنڈے اور زیادہ گرم چیزوں کا استعمال نا کرے .
بہونی ، تلے یا مرچ ماسالیدار چٹپٹا قسم کے کھانوں سے پرہیز کرے .
گوشت ، شراب ، کڑک چائے ، تمباکو ، کافی ، گھٹکا سے پرہیز کرے .
اکیلےسفر پر جانے ، سیدھی چڑھنے سے بچے .
آگ اور پانی سے دور رہے .
مسور کی دال ، وداد ، گوبھی ، مچھلی ، بیگن ، مٹر ، مولی کا استعمال بہت کم کرے .
پیشاب کوبالکل نا روکے .

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

آپ کیا کہتے ہیں؟